اسلامیہ یونیورسٹی بہاولپور کے اساتذہ اور عملہ ’منشیات کے استعمال اور طلبہ کے جنسی استحصال میں ملوث‘

In بریکنگ نیوز
July 23, 2023
اسلامیہ یونیورسٹی بہاولپور کے اساتذہ اور عملہ ’منشیات کے استعمال اور طلبہ کے جنسی استحصال میں ملوث‘

اسلامیہ یونیورسٹی بہاولپور کے اساتذہ اور عملہ ’منشیات کے استعمال اور طلبہ کے جنسی استحصال میں ملوث

 

 

 

بہاولپور – پنجاب پولیس کی ایک خصوصی رپورٹ نے اسلامیہ یونیورسٹی آف بہاولپور کو قومی میڈیا کی روشنی میں لایا ہے کیونکہ تفتیش کاروں نے یونیورسٹی کو منشیات اور جنسی استحصال کی آماجگاہ ہونے کا دعویٰ کیا ہے۔

آئی یو بی کے چیف سیکیورٹی آفیسر کی گرفتاری کے بعد یونیورسٹی کے ایک اور اہلکار کو منشیات کی بارات میں گرفتار کیا گیا ہے۔ پولیس کا دعویٰ ہے کہ ملزم یونیورسٹی کا ٹرانسپورٹ انچارج بتایا جاتا ہے اور اس کے قبضے سے تھوڑی مقدار میں میتھیمفیٹامائن برآمد کرنے کا ذکر کیا ہے۔

تفتیش کے دوران بہاولپور پولیس نے نارکوٹک ایکٹ کے تحت مقدمہ درج کرکے تمام ملزمان کی گرفتاری کے لیے تحقیقات کا دائرہ وسیع کردیا ہے۔

خصوصی رپورٹ میں تفتیش کاروں نے دعویٰ کیا کہ اساتذہ کا ایک گروپ منشیات فروشی اور طالبات اور دیگر اساتذہ کے جنسی استحصال میں ملوث تھا۔

پولیس نے اس کے موبائل فون سے بالغ مواد بھی برآمد کیا، جیسا کہ اس کے قبضے سے کئی منشیات اور پارٹی کی گولیاں تھیں۔ مبینہ گروپ کے ارکان طلباء اور اساتذہ کو بلیک میل کرنے اور جنسی استحصال میں ملوث تھے۔ یہ لوگ منشیات بانٹتے ہیں اور یہاں تک کہ ڈانس اور سیکس پارٹیوں کا بھی اہتمام کرتے ہیں۔

ملزمان مبینہ طور پر طالبات اور عملے کے ارکان کو ان کے پرائیویٹ کلپس بنا کر بلیک میل کرتے تھے جبکہ کچھ طالبات نے منشیات کی تقسیم میں ان ارکان کی مدد بھی کی۔

دوسری جانب آئی بی یو کے وائس چانسلر نے حالیہ پیشرفت کی تحقیقات کے لیے آئی جی پی سمیت پنجاب کے اعلیٰ پولیس حکام سے رابطہ کیا ہے اور کہا ہے کہ گرفتار اہلکاروں کے خلاف مقدمات جھوٹے ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ یونیورسٹی جنسی ہراسانی یا استحصال کے طور پر منشیات کے استعمال کے لیے صفر رواداری کی پالیسی پر عمل پیرا ہے۔ یونیورسٹی نے پولیس اہلکاروں سے تفتیشی ٹیم کو نئے سرے سے تشکیل دینے کو کہا۔

/ Published posts: 3267

موجودہ دور میں انگریزی زبان کو بہت پذیرآئی حاصل ہوئی ہے۔ دنیا میں ۹۰ فیصد ویب سائٹس پر انگریزی زبان میں معلومات فراہم کی جاتی ہیں۔ لیکن پاکستان میں ۸۰سے ۹۰ فیصد لوگ ایسے ہیں. جن کو انگریزی زبان نہ تو پڑھنی آتی ہے۔ اور نہ ہی وہ انگریزی زبان کو سمجھ سکتے ہیں۔ لہذا، زیادہ تر صارفین ایسی ویب سائیٹس سے علم حاصل کرنے سے قاصر ہیں۔ اس لیے ہم نے اپنے زائرین کی آسانی کے لیے انگریزی اور اردو دونوں میں مواد شائع کرنے کا فیصلہ کیا ہے ۔ جس سے ہمارےپاکستانی لوگ نہ صرف خبریں بآسانی پڑھ سکیں گے۔ بلکہ یہاں پر موجود مختلف کھیلوں اور تفریحوں پر مبنی مواد سے بھی فائدہ اٹھا سکیں گے۔ نیوز فلیکس پر بہترین رائٹرز اپنی سروسز فراہم کرتے ہیں۔ جن کا مقصد اپنے ملک کے نوجوانوں کی صلاحیتوں اور مہارتوں میں اضافہ کرنا ہے۔

Twitter
Facebook
Youtube
Linkedin
Instagram