جبل عرفات (کوہ عرفات)

In اسلام
March 26, 2023
جبل عرفات (کوہ عرفات)

جبل عرفات (کوہ عرفات)

جبل عرفات (عربی: جبل عرفات) میدان عرفات میں خانہ کعبہ سے تقریباً 20 کلومیٹر کے فاصلے پر ایک چھوٹا گرینائٹ پہاڑ ہے۔ عرفات میں قیام حج کا بنیادی تقاضا ہے۔ حجاج کرام حج کے دوسرے دن (9 ذی الحجہ) کو منیٰ سے یہاں کا سفر کرتے ہیں۔ پہاڑ کو جبل الرحمۃ کے نام سے بھی جانا جاتا ہے، جس کا مطلب ہے ‘رحم کا پہاڑ’۔

عرفات کے معنی

عرفات کے عام معنی ’’جاننا‘‘ کے ہیں۔ جنت سے نکال کر روئے زمین پر بھیج کر جبل عرفات میں حضرت آدم علیہ السلام اور حوا علیہ السلام کی دوبارہ ملاقات ہوئی۔

عرفہ (عرفة) دن کا نام ہے اور عرفات (عرفات) زمین کا نام ہے۔

حجاج کے لیے عرفات کی اہمیت

عرفات پر کھڑا ہونا حج کا ایک لازمی حصہ ہے۔ جس نے عرفات میں قیام نہ چھوڑا اس کا حج فوت ہوگیا کیونکہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: حج عرفات ہے۔ [الحکیم]

عرفات کے دن کی بہت فضیلتیں ہیں جیسا کہ بہت سی احادیث میں منقول ہے۔ عائشہ رضی اللہ عنہا سے روایت ہے کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: ”عرفات کے دن سے زیادہ کوئی دن ایسا نہیں جس میں اللہ تعالیٰ زیادہ جانوں کو جہنم کی آگ سے آزاد کرے۔ اور اس دن اللہ تعالیٰ زمین کے قریب آتا ہے اور اپنی شان کا اظہار کرتے ہوئے فرشتوں سے فرماتا ہے کہ ’’ان (میرے بندوں) کی کیا خواہش ہے؟‘‘ (مسلم)

عرفات کے دن کی دعا

رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: عرفات کے دن سب سے افضل دعا، اور ان تمام دعاؤں میں سب سے افضل جو میں نے کبھی پڑھی ہیں یا مجھ سے پہلے دوسرے انبیاء کرام علیہم السلام نے پڑھی ہیں: ‘اللہ کے سوا کوئی معبود نہیں، وہ اکیلا ہے۔ اس کا کوئی شریک نہیں، ساری کائنات اسی کے لیے ہے اور اسی کے لیے حمد ہے اور وہ ہر چیز پر قادر ہے۔‘‘ [ترمذی]

ایک اور حدیث میں ہے کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: غزوہ بدر کے دن کے علاوہ کوئی دن ایسا نہیں جس میں شیطان عرفات کے دن سے زیادہ ذلیل، زیادہ مردود، زیادہ اداس اور زیادہ مشتعل نظر آئے۔ اور درحقیقت یہ سب کچھ صرف رحمت کے نزول کی کثرت اور بندوں کے کبیرہ گناہوں کی اللہ کی بخشش دیکھنے کی وجہ سے ہے۔

عرفات کے دن روزہ رکھنا

عرفات کے دن کی فضیلت میں سے ایک یہ ہے کہ اس دن کا روزہ گزشتہ اور آنے والے سال کے گناہوں کا کفارہ بن جاتا ہے۔ ابو قتادہ رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ ایک آدمی نے کہا: یا رسول اللہ، عرفات کے دن روزہ رکھنے کے بارے میں آپ کا کیا خیال ہے؟ آپ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: ‘یہ پچھلے سال اور آنے والے سال کے گناہوں کا کفارہ ہے’ [مسلم]

یہ (روزہ) ان لوگوں کے لیے مستحب ہے جو حج پر نہیں ہیں۔ جو شخص حج پر ہے اس کے لیے عرفات کے دن روزہ رکھنا سنت نہیں ہے، کیونکہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے عرفات میں اس دن کا روزہ نہیں رکھا تھا۔

جبل عرفات میں عکاسی کے مقامات

جبل عرفات دعا کی ایک خاص جگہ ہے۔ اس مقام کی فضیلت اللہ (ﷻ) سے مانگنے اور جواب دینے کا وعدہ ہے۔ ہمارے پیارے نبی صلی اللہ علیہ وسلم اور حضرت ابراہیم علیہ السلام نے اسی مقام پر دعا کی۔ حجاج کا دل محتاجی کے سوا کسی چیز سے نہیں بھرنا چاہیے۔ سوال کرنے کے لیے اس سے بہتر دن اور کیا ہو گا کہ اگر ہم اللہ تعالیٰ کے وعدے کے مطابق جواب میں حصہ نہ لیں تو ہم ہی خسارے میں ہیں۔

حوالہ جات: مکہ مکرمہ کی تاریخ – ڈاکٹر محمد الیاس عبدالغنی، مقدس مکہ – شیخ صفی الرحمن مبارکپوری، حج کے فضائل – شیخ زکریا کاندھلوی

/ Published posts: 3239

موجودہ دور میں انگریزی زبان کو بہت پذیرآئی حاصل ہوئی ہے۔ دنیا میں ۹۰ فیصد ویب سائٹس پر انگریزی زبان میں معلومات فراہم کی جاتی ہیں۔ لیکن پاکستان میں ۸۰سے ۹۰ فیصد لوگ ایسے ہیں. جن کو انگریزی زبان نہ تو پڑھنی آتی ہے۔ اور نہ ہی وہ انگریزی زبان کو سمجھ سکتے ہیں۔ لہذا، زیادہ تر صارفین ایسی ویب سائیٹس سے علم حاصل کرنے سے قاصر ہیں۔ اس لیے ہم نے اپنے زائرین کی آسانی کے لیے انگریزی اور اردو دونوں میں مواد شائع کرنے کا فیصلہ کیا ہے ۔ جس سے ہمارےپاکستانی لوگ نہ صرف خبریں بآسانی پڑھ سکیں گے۔ بلکہ یہاں پر موجود مختلف کھیلوں اور تفریحوں پر مبنی مواد سے بھی فائدہ اٹھا سکیں گے۔ نیوز فلیکس پر بہترین رائٹرز اپنی سروسز فراہم کرتے ہیں۔ جن کا مقصد اپنے ملک کے نوجوانوں کی صلاحیتوں اور مہارتوں میں اضافہ کرنا ہے۔

Twitter
Facebook
Youtube
Linkedin
Instagram