پاکستان ای سیفٹی کو یقینی بنانے کے لیے ویب سائٹس، یوٹیوب چینلز کو رجسٹر کرنے کا ارادہ رکھتا ہے۔

پاکستان ای سیفٹی کو یقینی بنانے کے لیے ویب سائٹس، یوٹیوب چینلز کو رجسٹر کرنے کا ارادہ رکھتا ہے۔

پاکستان ای سیفٹی کو یقینی بنانے کے لیے ویب سائٹس، یوٹیوب چینلز کو رجسٹر کرنے کا ارادہ رکھتا ہے۔

 

 

اسلام آباد – وفاقی حکومت نے ویب سائٹس، ویب چینلز اور یوٹیوب چینلز کو رجسٹر کرنے کا فیصلہ کیا ہے کیونکہ اس کا مقصد سائبر کرائم کو روکنا اور آن لائن سرگرمیوں کی نگرانی کو بڑھانا ہے۔

رپورٹس میں کہا گیا ہے کہ حکومت ملک میں آن لائن سرگرمیوں اور سائبر کرائم کی نگرانی کے لیے ایک علیحدہ ریگولیٹری اتھارٹی کے قیام پر غور کر رہی ہے۔

پی ٹی اے، ایف آئی اے سائبر کرائم سیل کے اختیارات اس اتھارٹی کو منتقل ہوں گے جو وزارت انفارمیشن ٹیکنالوجی کے تحت قائم کیا جائے گا۔

وزارت نے وفاقی کابینہ کو ایک بل بھیجا ہے جس کو ‘ای سیفٹی اتھارٹی’ کا نام دیا جا رہا ہے۔ بل میں کہا گیا ہے کہ اتھارٹی تمام ویب سائٹس کی نگرانی کرے گی۔

اس کے پاس لائسنس جاری کرنے اور قانون کی خلاف ورزی پر جرمانے عائد کرنے کا اختیار بھی ہوگا جب کہ اتھارٹی ٹی وی چینلز اور اخبارات کی ویب سائٹس کی بھی نگرانی کرے گی۔

رپورٹس میں مزید کہا گیا ہے کہ ویب سائٹس کی نگرانی کے اختیارات پاکستان ٹیلی کمیونیکیشن اتھارٹی (پی ٹی اے) سے واپس لے لیے جائیں گے۔

بل میں مزید کہا گیا ہے کہ پی ٹی اے کو پی آئی سی اے ایکٹ کے تحت سوشل میڈیا پر بلاک مواد تک رسائی حاصل نہیں تھی، انہوں نے مزید کہا کہ ایف آئی اے، جسے یہ کام سونپا گیا ہے، اس پر بھی زیادہ بوجھ ہے۔

/ Published posts: 3258

موجودہ دور میں انگریزی زبان کو بہت پذیرآئی حاصل ہوئی ہے۔ دنیا میں ۹۰ فیصد ویب سائٹس پر انگریزی زبان میں معلومات فراہم کی جاتی ہیں۔ لیکن پاکستان میں ۸۰سے ۹۰ فیصد لوگ ایسے ہیں. جن کو انگریزی زبان نہ تو پڑھنی آتی ہے۔ اور نہ ہی وہ انگریزی زبان کو سمجھ سکتے ہیں۔ لہذا، زیادہ تر صارفین ایسی ویب سائیٹس سے علم حاصل کرنے سے قاصر ہیں۔ اس لیے ہم نے اپنے زائرین کی آسانی کے لیے انگریزی اور اردو دونوں میں مواد شائع کرنے کا فیصلہ کیا ہے ۔ جس سے ہمارےپاکستانی لوگ نہ صرف خبریں بآسانی پڑھ سکیں گے۔ بلکہ یہاں پر موجود مختلف کھیلوں اور تفریحوں پر مبنی مواد سے بھی فائدہ اٹھا سکیں گے۔ نیوز فلیکس پر بہترین رائٹرز اپنی سروسز فراہم کرتے ہیں۔ جن کا مقصد اپنے ملک کے نوجوانوں کی صلاحیتوں اور مہارتوں میں اضافہ کرنا ہے۔

Twitter
Facebook
Youtube
Linkedin
Instagram