کولمبیا کے جنگل میں 4 بچے 40 دن تک کیسے زندہ رہے؟ تفصیلات جانئیے

کولمبیا کے جنگل میں 4 بچے 40 دن تک کیسے زندہ رہے؟ تفصیلات جانئیے

 

 

 

جمعہ کو، کولمبیا کے جنگل میں رات کے آخری پہر میں، فوج کے ریڈیو پیغامات نے سب کو حیران کر دیا جو کہ یہ تھا: ‘معجزہ، معجزہ، معجزہ، معجزہ۔’

ملٹری کوڈ نے انکشاف کیا کہ جنگل میں 40 دنوں سے لاپتہ چار بچے زندہ مل گئے تھے۔ یہ نوجوان، مقامی ہیوٹو لوگوں کے تمام ارکان، 1 مئی کے اوائل میں جس طیارے میں وہ سفر کر رہے تھے، ایمیزون میں گر کر تباہ ہونے کے بعد سے لاپتہ تھے۔

اس سانحے نے ان کی ماں کو ہلاک کر دیا اور بچوں کو زندہ چھوڑ دیا – جن کی عمریں 13، نو، چار اور ایک سال ہیں – یہ بچے سانپوں، جیگواروں اور مچھروں سے بھرے علاقے میں اکیلے پھنسے ہوئے تھے۔

امدادی کارکنوں کو ابتدائی طور پر بدترین خوف کا خدشہ تھا، لیکن قدموں کے نشانات، جزوی طور پر کھائے گئے جنگلی پھل اور دیگر اشارے نے جلد ہی انہیں یہ امید دلائی کہ بچے ممکنہ طور پر مدد کی تلاش میں جائے حادثہ سے نکلنے کے بعد زندہ ہیں۔

اگلے چھ ہفتوں کے دوران، بچوں نے مشکلات کا مقابلہ کیا -ہیوٹو کے لوگ چھوٹی عمر سے ہی شکار، مچھلیاں پکڑنا اور جمع کرنا سیکھتے ہیں اور ان کے دادا فیڈینسیو والنسیا نے صحافیوں کو بتایا کہ سب سے بڑے بچے لیسلی اور سولینی جنگل سے اچھی طرح واقف تھے۔

انہوں نے سیسنا 206 طیارے کے ملبے سے فارینا، ایک قسم کا کاساوا آٹا بھی برآمد کیا جس میں وہ سفر کر رہے تھے۔ بچے آٹے پر اس وقت تک زندہ رہے جب تک کہ یہ ختم نہ ہو گیا اور پھر انہوں نے بیج تلاش کر کے کھا لیے

شکاریوں سے بچنے کے علاوہ، بچوں نے شدید بارش کے طوفانوں کو بھی برداشت کیا اور ہو سکتا ہے کہ انہیں جنگل میں سرگرم مسلح گروہوں سے بچنا پڑا ہو۔انہوں نے کہا، ‘وہی ماں، جو حادثے کے بعد روح بن گئی، ان کی حفاظت کی۔ ‘اور اب وہ آرام کر رہی ہے۔’

/ Published posts: 3261

موجودہ دور میں انگریزی زبان کو بہت پذیرآئی حاصل ہوئی ہے۔ دنیا میں ۹۰ فیصد ویب سائٹس پر انگریزی زبان میں معلومات فراہم کی جاتی ہیں۔ لیکن پاکستان میں ۸۰سے ۹۰ فیصد لوگ ایسے ہیں. جن کو انگریزی زبان نہ تو پڑھنی آتی ہے۔ اور نہ ہی وہ انگریزی زبان کو سمجھ سکتے ہیں۔ لہذا، زیادہ تر صارفین ایسی ویب سائیٹس سے علم حاصل کرنے سے قاصر ہیں۔ اس لیے ہم نے اپنے زائرین کی آسانی کے لیے انگریزی اور اردو دونوں میں مواد شائع کرنے کا فیصلہ کیا ہے ۔ جس سے ہمارےپاکستانی لوگ نہ صرف خبریں بآسانی پڑھ سکیں گے۔ بلکہ یہاں پر موجود مختلف کھیلوں اور تفریحوں پر مبنی مواد سے بھی فائدہ اٹھا سکیں گے۔ نیوز فلیکس پر بہترین رائٹرز اپنی سروسز فراہم کرتے ہیں۔ جن کا مقصد اپنے ملک کے نوجوانوں کی صلاحیتوں اور مہارتوں میں اضافہ کرنا ہے۔

Twitter
Facebook
Youtube
Linkedin
Instagram