جاپان کی تیز ترین ٹرین یاماناشی میگلیو 7 سیکنڈ میں 1 کلومیٹر سے زیادہ کا فاصلہ طے کر سکتی ہے۔ یہ 2027 کے بعد آپریشنل ہونے کے لیے تیار ہے۔

جاپان کی تیز ترین ٹرین یاماناشی میگلیو 7 سیکنڈ میں 1 کلومیٹر سے زیادہ کا فاصلہ طے کر سکتی ہے۔ یہ 2027 کے بعد آپریشنل ہونے کے لیے تیار ہے۔

جاپان کی تیز ترین ٹرین یاماناشی میگلیو 7 سیکنڈ میں 1 کلومیٹر سے زیادہ کا فاصلہ طے کر سکتی ہے۔ یہ 2027 کے بعد آپریشنل ہونے کے لیے تیار ہے۔

 

 

سینٹرل جاپان ریلوے کمپنی (جے آر سنٹرل) ایک نئی ٹرین لائن تعمیر کر رہی ہے جو 500 کلومیٹر فی گھنٹہ تک کی ناقابل یقین حد تک تیز رفتاری سے سفر کرنے کے لیے مقناطیسی لیویٹیشن، یا ‘میگلیو’ ٹیکنالوجی کا استعمال کرتی ہے۔ روایتی ریلوں کے بجائے، میگلیو ٹرینیں طاقتور مقناطیس کا استعمال کرتے ہوئے پٹریوں کے اوپر تیرتی ہیں۔

یہ نئی ٹرین لائن، جسے لینئر چوا شنکاسن کہا جاتا ہے، 2027 میں شروع ہونے والی ہے اور ٹوکیو کو ناگویا سے صرف 40 منٹ میں جوڑے گی۔ یہ جاپان کی موجودہ بلٹ ٹرینوں سے کہیں زیادہ تیز ہے، جو 320 کلومیٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے سفر کرتی ہیں۔ اس تیز رفتار میگلیو لائن کی تعمیر پر تقریباً 100 بلین ڈالر لاگت آئے گی، ٹریک کا ایک اہم حصہ پہاڑوں سے گزرے گا۔

جے آر سنٹرل 1997 سے ماؤنٹ فوجی کے قریب میگلیو ٹرینوں کی جانچ کر رہا ہے۔ لوگ ان ٹیسٹوں کو یاماناشی پریفیکچرل میگلیو ایگزیبیشن سینٹر میں دیکھ سکتے ہیں، جہاں 2014 سے 30,000 سے زیادہ زائرین ٹیسٹ ٹرینوں میں سوار ہو چکے ہیں۔ ان ٹیسٹوں کے دوران، ایک میگلیو ٹرین نے 603 فی گھنٹہ 205 کلومیٹر فی گھنٹہ کی ریکارڈ رفتار حاصل کی۔

فی الحال، شنگھائی دنیا کے تیز ترین تجارتی میگلیو پر فخر کرتا ہے، جس کی رفتار 431 کلومیٹر فی گھنٹہ ہے۔ 2003 میں ایک ٹیسٹ رن میں، یہ 501 کلومیٹر فی گھنٹہ کی قابل ذکر ٹاپ اسپیڈ تک پہنچ گیا۔

جاپان کی موجودہ بلٹ ٹرینیں تقریباً 3,300 کلومیٹر کے ٹریک پر چلتی ہیں، جو ہوکائیڈو سے کیوشو تک مختلف علاقوں کو جوڑتی ہیں۔ پہلا سیکشن 1964 میں ٹوکیو اولمپکس سے ٹھیک پہلے کھولا گیا تھا، جس سے مسافروں کو چار گھنٹے میں ٹوکیو سے اوساکا پہنچنے کا موقع ملا۔

/ Published posts: 3238

موجودہ دور میں انگریزی زبان کو بہت پذیرآئی حاصل ہوئی ہے۔ دنیا میں ۹۰ فیصد ویب سائٹس پر انگریزی زبان میں معلومات فراہم کی جاتی ہیں۔ لیکن پاکستان میں ۸۰سے ۹۰ فیصد لوگ ایسے ہیں. جن کو انگریزی زبان نہ تو پڑھنی آتی ہے۔ اور نہ ہی وہ انگریزی زبان کو سمجھ سکتے ہیں۔ لہذا، زیادہ تر صارفین ایسی ویب سائیٹس سے علم حاصل کرنے سے قاصر ہیں۔ اس لیے ہم نے اپنے زائرین کی آسانی کے لیے انگریزی اور اردو دونوں میں مواد شائع کرنے کا فیصلہ کیا ہے ۔ جس سے ہمارےپاکستانی لوگ نہ صرف خبریں بآسانی پڑھ سکیں گے۔ بلکہ یہاں پر موجود مختلف کھیلوں اور تفریحوں پر مبنی مواد سے بھی فائدہ اٹھا سکیں گے۔ نیوز فلیکس پر بہترین رائٹرز اپنی سروسز فراہم کرتے ہیں۔ جن کا مقصد اپنے ملک کے نوجوانوں کی صلاحیتوں اور مہارتوں میں اضافہ کرنا ہے۔

Twitter
Facebook
Youtube
Linkedin
Instagram