سعودی عالم دین نے یوٹیوب کی آمدنی کو حرام قرار دے دیا

سعودی عالم دین نے یوٹیوب کی آمدنی کو حرام قرار دے دیا

سعودی عالم دین نے یوٹیوب کی آمدنی کو حرام قرار دے دیا

 

 

یوٹیوب کی آمدنی کی مذہبی بنیاد پر ہمیشہ بحث ہوتی رہتی ہے۔ اس سوال کا جواب دیتے ہوئے سعودی عرب کے مشہور عالم دین شیخ عاصم الحکیم نے یوٹیوب سے ہونے والی کمائی کو حرام قرار دیا۔

اس معاملے کے حوالے سے ٹوئٹر پر ایک سوال کیا گیا۔ شیخ عاصم الحکیم انگریزی میں اسلام کے بارے میں رہنمائی کے لیے جانے جاتے ہیں، اور وہ بہت سے ٹی وی شوز میں عام سوالات کے جوابات دیتے نظر آتے ہیں۔ وہ یورپ اور ایشیا میں بھی لیکچر دیتے ہیں۔

اس لیے عاصم الحکیم کے مطابق یوٹیوب کے ذریعے ہونے والی آمدنی اسلام میں حرام ہے۔ صورتحال بہت سے مسلمانوں کے لیے تشویشناک ہے جن کی آمدنی کا واحد ذریعہ یوٹیوب ہے۔ شیخ عاصم الحکیم نے اپنے جواب سے اس عام سوال سے متعلق تمام الجھنوں کو دور کردیا۔

/ Published posts: 3258

موجودہ دور میں انگریزی زبان کو بہت پذیرآئی حاصل ہوئی ہے۔ دنیا میں ۹۰ فیصد ویب سائٹس پر انگریزی زبان میں معلومات فراہم کی جاتی ہیں۔ لیکن پاکستان میں ۸۰سے ۹۰ فیصد لوگ ایسے ہیں. جن کو انگریزی زبان نہ تو پڑھنی آتی ہے۔ اور نہ ہی وہ انگریزی زبان کو سمجھ سکتے ہیں۔ لہذا، زیادہ تر صارفین ایسی ویب سائیٹس سے علم حاصل کرنے سے قاصر ہیں۔ اس لیے ہم نے اپنے زائرین کی آسانی کے لیے انگریزی اور اردو دونوں میں مواد شائع کرنے کا فیصلہ کیا ہے ۔ جس سے ہمارےپاکستانی لوگ نہ صرف خبریں بآسانی پڑھ سکیں گے۔ بلکہ یہاں پر موجود مختلف کھیلوں اور تفریحوں پر مبنی مواد سے بھی فائدہ اٹھا سکیں گے۔ نیوز فلیکس پر بہترین رائٹرز اپنی سروسز فراہم کرتے ہیں۔ جن کا مقصد اپنے ملک کے نوجوانوں کی صلاحیتوں اور مہارتوں میں اضافہ کرنا ہے۔

Twitter
Facebook
Youtube
Linkedin
Instagram