What is blockchain technology?

In OUR SERVICES, TECH
January 19, 2023
What's blockchain technology?

What is blockchain Technology?

Blockchain technology is an advanced database medium that allows transparent information sharing within a business network. A blockchain database stores data in blocks that are linked together in a chain. The data is chronologically harmonious because you can not cancel or modify the chain without agreement from the network. As a result, you can use blockchain technology to produce an incommutable or fixed ledger for tracking orders, payments, accounts, and other deals. The system has erected mechanisms that help unauthorized deal entries and creates consistency in the participant view of these deals.

Why is Blockchain important?

Traditional database technologies present several challenges for recording fiscal deals. For example, consider the trade of a property. Once the money is changed, ownership of the property is transferred to the buyer. Collectively, both the buyer and the seller can record the financial deals, but neither source can be trusted. The dealer can easily claim they’ve not received the money indeed though they have, and the buyer can equally argue that they’ve paid the money even if they haven’t.

To avoid potential legal issues, a trusted third party has to supervise and validate deals. The presence of this central authority not only complicates the deal but also creates a single point of vulnerability. However, both parties could suffer, If the central database was compromised.

Blockchain mitigates such issues by creating a decentralized, tamper-evidence system to record deals. In the property transaction script, the blockchain creates one ledger each for the buyer and the seller. All transactions must be approved by both parties and are automatically updated in both of their ledgers in real-time. Any corruption in historical transactions will lose the entire ledger. These parcels of blockchain technology have led to its use in various sectors, including the creation of digital currency like Bitcoin.

For the Blockchain Services, Reach out Here To Hire the best Developers:

Fiverr : https://www.fiverr.com/shaguonline/develop-your-own-crypto-exchange-platform-website-android-ios-applications

Linked : linkedin.com/in/shagufta-naz-0ba5301b5

Cell Phone: +92-321-4617-046

How do different industries use Blockchain?

Blockchain is a coming-up technology that’s being adopted in an innovative manner by various industries. We describe some use cases in different industries in the following subsections
Energy

Energy companies use blockchain technology to produce peer-to-peer energy trading platforms and streamline access to renewable energy. For illustration, consider these uses

Blockchain-based energy companies have created a trading platform for the sale of electricity between individuals. Homeowners with solar panels use this platform to sell their excess solar energy to neighbors. The process is largely automated smart meters create transactions, and blockchain records them.

With blockchain-based crowdfunding initiatives, users can sponsor and own solar panels in communities that lack energy access. Sponsors might also receive rent for these communities once the solar panels are constructed.

Finance

Traditional financial systems, like banks and stock exchanges, use blockchain services to manage online payments, accounts, and market trading. For illustration, Singapore Exchange Limited, an investment holding company that provides fiscal trading services throughout Asia, uses blockchain technology to make a more effective interbank payment account. By adopting blockchain, they answered several challenges, including batch processing and manual reconciliation of several thousand fiscal deals.

Media and Entertainment

Companies in media and entertainment use blockchain systems to manage copyright data. Copyright verification is critical for the fair compensation of artists. It takes multiple deals to record the trade or transfer of brand content. Sony Music Entertainment Japan uses blockchain services to make digital rights management more efficient. They’ve successfully used blockchain strategy to amend productivity and reduce costs in copyright processing.

Retail

Retail companies use blockchain to track the movement of goods between suppliers and buyers. For illustration, Amazon retail has filed a patent for a distributed ledger technology system that will use blockchain technology to corroborate that all goods vended on the platform are authentic. Amazon sellers can map their global force chains by allowing participants similar to manufacturers, couriers, distributors, end users, and secondary users to add events to the ledger after registering with a certificate authority.

What are the features of Blockchain technology?

Blockchain technology has the following main features

Decentralization

Decentralization in blockchain refers to transferring control and decision-making from a centralized reality( existent, association, or group) to a distributed network. Decentralized blockchain networks use transparency to reduce the need for trust among participants. These networks also discourage actors from exerting authority or control over one another in ways that degrade the functionality of the network.

Immutability

Immutability means commodities can not be changed or altered. No participant can tamper with a transaction once someone has recorded it to the participated ledger. However, you must add a new sale to reverse the mistake, and both deals are visible to the network If a transaction record includes an error.

Consensus

A blockchain system establishes rules about party consent for recording deals. You can record new transactions only when the maturity of participants in the network gives their consent.

What are the key components of blockchain technology?

Blockchain architecture has the following main components

A distributed Ledger

A distributed ledger is the shared database in the blockchain network that stores the transactions, such as a shared file that everyone in the team can edit. In most shared text editors, anyone with editing rights can delete the entire file. However, distributed ledger technologies have strict rules about who can edit and how to edit. You cannot delete entries once they have been recorded.

Smart Contracts

Companies use smart contracts to self-manage business contracts without the need for an assisting third party. They are programs stored on the blockchain system that runs automatically when predetermined conditions are met. They run if-then checks so that transactions can be completed confidently. For example, a logistics company can have a smart contract that automatically makes payment once goods have arrived at the port.

Public key cryptography

Public key cryptography is a security feature to uniquely identify participants in the blockchain network. This mechanism generates two sets of keys for network members. One key is a public key that is common to everyone in the network. The other is a private key that is unique to every member. The private and public keys work together to unlock the data in the ledger. 

For example, John and Jill are two members of the network. John records a transaction that is encrypted with his private key. Jill can decrypt it with her public key. This way, Jill is confident that John made the transaction. Jill’s public key wouldn’t have worked if John’s private key had been tampered with.

How does blockchain work?

While underlying blockchain mechanisms are complex, we give a brief overview in the following steps. Blockchain software can automate most of these steps:

Step 1 – Record the transaction

A blockchain transaction shows the movement of physical or digital assets from one party to another in the blockchain network. It is recorded as a data block and can include details like these:

  1. Who was involved in the transaction?
  2. What happened during the transaction?
  3. When did the transaction occur?
  4. Where did the transaction occur?
  5. Why did the transaction occur?
  6. How much of the asset was exchanged?
  7. How many pre-conditions were met during the transaction?

Step 2 – Gain Consensus

Most participants on the distributed blockchain network must agree that the recorded transaction is valid. Depending on the type of network, rules of agreement can vary but are typically established at the start of the network.

Step 3 – Link the blocks

Once the participants have reached a consensus, transactions on the blockchain are written into blocks equivalent to the pages of a ledger book. Along with the transactions, a cryptographic hash is also appended to the new block. The hash acts as a chain that links the blocks together. If the contents of the block are intentionally or unintentionally modified, the hash value changes, providing a way to detect data tampering. 

Thus, the blocks and chains link securely, and you cannot edit them. Each additional block strengthens the verification of the previous block and therefore the entire blockchain. This is like stacking wooden blocks to make a tower. You can only stack blocks on top, and if you remove a block from the middle of the tower, the whole tower breaks.

Step 4 – Share the ledger

The system distributes the latest copy of the central ledger to all participants.

For the Blockchain Services, Reach out Here To Hire the best Developers:

Fiverr : https://www.fiverr.com/shaguonline/develop-your-own-crypto-exchange-platform-website-android-ios-applications

Linked : linkedin.com/in/shagufta-naz-0ba5301b5

Cell Phone: +92-321-4617-046

What are the types of blockchain networks?

There are four main types of decentralized or distributed networks in the blockchain:

Public Blockchain networks

Public blockchains are permissionless and allow everyone to join them. All members of the blockchain have equal rights to read, edit, and validate the blockchain. People primarily use public blockchains to exchange and mine cryptocurrencies like Bitcoin, Ethereum, and Litecoin.

Private Blockchain Networks

A single organization controls private blockchains, also called managed blockchains. The authority determines who can be a member and what rights they have in the network. Private blockchains are only partially decentralized because they have access restrictions. Ripple, a digital currency exchange network for businesses, is an example of a private blockchain.

Hybrid Blockchain Networks

Hybrid blockchains combine elements from both private and public networks. Companies can set up private, permission-based systems alongside a public system. In this way, they control access to specific data stored in the blockchain while keeping the rest of the data public. They use smart contracts to allow public members to check if private transactions have been completed. For example, hybrid blockchains can grant public access to digital currency while keeping bank-owned currency private.

Consortium blockchain networks

A group of organizations governs consortium blockchain networks. Preselected organizations share the responsibility of maintaining the blockchain and determining data access rights. Industries in which many organizations have common goals and benefit from shared responsibility often prefer consortium blockchain networks. For example, the Global Shipping Business Network Consortium is a not-for-profit blockchain consortium that aims to digitize the shipping industry and increase collaboration between maritime industry operators.

What is Blockchain Protocols?

The term blockchain protocol refers to different types of blockchain platforms that are available for application development. Each blockchain protocol adapts the basic blockchain principles to suit specific industries or applications. Some examples of blockchain protocols are provided in the following subsections:

Hyperledger Fabric

Hyperledger Fabric is an open-source project with a suite of tools and libraries. Enterprises can use it to build private blockchain applications quickly and effectively. It is a modular, general-purpose framework that offers unique identity management and access control features. These features make it suitable for various applications, such as track-and-trace of supply chains, trade finance, loyalty and rewards, and clearing settlement of financial assets.

Ethereum

Ethereum is a decentralized open-source blockchain platform that people can use to build public blockchain applications. Ethereum Enterprise is designed for business use cases.

Corda

Corda is an open-source blockchain project designed for business. With Corda, you can build interoperable blockchain networks that transact in strict privacy. Businesses can use Corda’s smart contract technology to transact directly, with value. Most of its users are financial institutions.

Quorum

Quorum is an open-source blockchain protocol that is derived from Ethereum. It is specially designed for use in a private blockchain network, where only a single member owns all the nodes, or in a consortium blockchain network, where multiple members each own a portion of the network.

How did Blockchain Technology Evolve?

Blockchain technology has its roots in the late 1970s when a computer scientist named Ralph Merkle patented Hash trees or Merkle trees. These trees are a computer science structure for storing data by linking blocks using cryptography. In the late 1990s, Stuart Haber and W. Scott Stornetta used Merkle trees to implement a system in which document timestamps could not be tampered with. This was the first instance in the history of blockchain.

Technology has continued to evolve over these three generations

First Generation – Bitcoin and other virtual currencies

In 2008, an anonymous individual or group of individuals known only by the name Satoshi Nakamoto outlined blockchain technology in its modern form. Satoshi’s idea of the Bitcoin blockchain used 1 MB blocks of information for Bitcoin transactions. Many of the features of Bitcoin blockchain systems remain central to blockchain technology even today.

Second Generation – Smart Contracts

A few years after first-generation currencies emerged, developers began to consider blockchain applications beyond cryptocurrency. For instance, the inventors of Ethereum decided to use blockchain technology in asset transfer transactions. Their significant contribution was the smart contracts feature.

Third generation – the future

As companies discover and implement new applications, blockchain technology continues to evolve and grow. Companies are solving limitations of scale and computation, and potential opportunities are limitless in the ongoing blockchain revolution.

What are the benefits of blockchain technology?

Blockchain technology brings many benefits to asset transaction management. We list a few of them in the following subsections:

Advanced Security

Blockchain systems provide the high level of security and trust that modern digital transaction require. There is always a fear that someone will manipulate underlying software to generate fake money for themselves. But blockchain uses the three principles of cryptography, decentralization, and consensus to create a highly secure underlying software system that is nearly impossible to tamper with. There is no single point of failure, and a single user cannot change the transaction records.

Improved Efficiency

Business-to-business transactions can take a lot of time and create operational bottlenecks, especially when compliance and third-party regulatory bodies are involved. Transparency and smart contracts in blockchain make such business transactions faster and more efficient.

Faster Auditing

Enterprises must be able to securely generate, exchange, archive, and reconstruct e-transactions in an auditable manner. Blockchain records are chronologically immutable, which means that all records are always ordered by time. This data transparency makes audit processing much faster.

What is the difference between Bitcoin and Blockchain?

Bitcoin and blockchain might be used interchangeably, but they are two different things. Since Bitcoin was an early application of blockchain technology, people inadvertently began using Bitcoin to mean blockchain, creating this misnomer. But blockchain technology has many applications outside of Bitcoin.

Bitcoin is a digital currency that operates without any centralized control. Bitcoins were originally created to make financial transactions online but are now considered digital assets that can be converted to any other global currency, like USD or euros. A public Bitcoin blockchain network creates and manages the central ledger.

Bitcoin Network

A public ledger records all Bitcoin transactions, and servers around the world hold copies of this ledger. The servers are like banks. Although each bank knows only about the money its customer’s exchange, Bitcoin servers are aware of every single Bitcoin transaction in the world.

Anyone with a spare computer can set up one of these servers, known as a node. This is like opening your own Bitcoin bank instead of a bank account.

Bitcoin Mining

On the public Bitcoin network, members mine for cryptocurrency by solving cryptographic equations to create new blocks. The system broadcasts each new transaction publicly to the network and shares it from node to node. Every ten minutes or so, miners collect these transactions into a new block and add them permanently to the blockchain, which acts like the definitive account book of Bitcoin.

Mining requires significant computational resources and takes a long time due to the complexity of the software process. In exchange, miners earn a small amount of cryptocurrency. The miners act as modern clerks who record transactions and collect transaction fees.

All participants across the network reach a consensus on who owns which coins, using blockchain cryptography technology.

What is the difference between a Database and a Blockchain?

Blockchain is a special type of database management system that has more features than a regular database. We describe some significant differences between a traditional database and a blockchain in the following list:

  • Blockchains decentralize control without damaging trust in the existing data. This is not possible in other database systems.
  • Companies involved in a transaction cannot share their entire database. But in blockchain networks, each company has its copy of the ledger, and the system automatically maintains consistency between the two ledgers.
  • Although in most database systems you can edit or delete data, in the blockchain you can only insert data.

How is Blockchain different from the cloud?

The term cloud refers to computing services that can be accessed online. You can access Software as a Service (SaaS), Product as a Service (PaaS), and Infrastructure as a Service (IaaS) from the cloud. Cloud providers manage their hardware and infrastructure and give you access to these computing resources over the internet. They provide many more resources than just database management. If you want to join a public blockchain network, you need to provide your hardware resources to store your ledger copy. You could use a server from the cloud for this purpose too. Some cloud providers also offer complete Blockchain as a Service (BaaS) from the cloud.

What is Blockchain as a Service?

Blockchain as a Service (BaaS) is a managed blockchain service that a third party provides in the cloud. You can develop blockchain applications and digital services while the cloud provider supplies the infrastructure and blockchain-building tools. All you have to do is customize existing blockchain technology, which makes blockchain adoption faster and more efficient.

For the Blockchain Services, Reach out Here To Hire the best Developers:

Fiverr : https://www.fiverr.com/shaguonline/develop-your-own-crypto-exchange-platform-website-android-ios-applications

Linked : linkedin.com/in/shagufta-naz-0ba5301b5

Cell Phone: +92-321-4617-046

What are AWS Blockchain services?

AWS Blockchain services provide purpose-built tools to support your requirement. You can use them to build everything from a centralized ledger database that maintains an immutable record of transactions to a multi-party, fully managed blockchain network that helps eliminate intermediaries. AWS has numerous validated blockchain solutions from partners who support all major blockchain protocols, including Hyperledger, Corda, Ethereum, Quorum, and more. As a result, you can develop blockchain and ledger applications more easily, quickly, and efficiently with AWS. Get started with blockchain by creating an AWS account today.

 

بلاک چین ٹیکنالوجی کیا ہے؟

بلاک چین ٹیکنالوجی ایک جدید ڈیٹا بیس میکانزم ہے جو کاروباری نیٹ ورک کے اندر شفاف معلومات کے اشتراک کی اجازت دیتا ہے۔ ایک بلاک چین ڈیٹا بیس ان بلاکس میں ڈیٹا اسٹور کرتا ہے جو ایک زنجیر میں آپس میں جڑے ہوتے ہیں۔ ڈیٹا تاریخی طور پر مطابقت رکھتا ہے کیونکہ آپ نیٹ ورک سے اتفاق رائے کے بغیر سلسلہ کو حذف یا ترمیم نہیں کرسکتے ہیں۔ نتیجے کے طور پر، آپ بلاک چین ٹیکنالوجی کا استعمال کرکے آرڈرز، ادائیگیوں، اکاؤنٹس، اور دیگر لین دین کو ٹریک کرنے کے لیے ایک ناقابل تغیر یا ناقابل تبدیلی لیجر بنا سکتے ہیں۔ سسٹم میں بلٹ ان میکانزم ہیں جو غیر مجاز لین دین کے اندراجات کو روکتے ہیں اور ان لین دین کے مشترکہ نقطہ نظر میں مستقل مزاجی پیدا کرتے ہیں۔

بلاک چین کیوں اہم ہے؟

روایتی ڈیٹا بیس ٹیکنالوجیز مالی لین دین کو ریکارڈ کرنے کے لیے کئی چیلنجز پیش کرتی ہیں۔ مثال کے طور پر، جائیداد کی فروخت پر غور کریں۔ رقم کا تبادلہ ہونے کے بعد، جائیداد کی ملکیت خریدار کو منتقل کر دی جاتی ہے۔ انفرادی طور پر، خریدار اور بیچنے والا دونوں ہی مالیاتی لین دین کو ریکارڈ کر سکتے ہیں، لیکن کسی بھی ذریعہ پر بھروسہ نہیں کیا جا سکتا۔ بیچنے والا آسانی سے دعویٰ کر سکتا ہے کہ اس کے پاس ہونے کے باوجود اس نے رقم وصول نہیں کی ہے، اور خریدار یکساں طور پر یہ دلیل دے سکتا ہے کہ اس نے رقم ادا کر دی ہے اگرچہ اس نے نہیں دی ہے۔

ممکنہ قانونی مسائل سے بچنے کے لیے، ایک قابل اعتماد تیسرے فریق کو لین دین کی نگرانی اور توثیق کرنی ہوگی۔ اس مرکزی اتھارٹی کی موجودگی نہ صرف لین دین کو پیچیدہ بناتی ہے بلکہ خطرے کا ایک نقطہ بھی پیدا کرتی ہے۔ اگر مرکزی ڈیٹا بیس سے سمجھوتہ کیا گیا تو دونوں فریقوں کو نقصان ہو سکتا ہے۔

بلاک چین لین دین کو ریکارڈ کرنے کے لیے ایک غیر مرکزی، چھیڑ چھاڑ سے پاک نظام بنا کر اس طرح کے مسائل کو کم کرتا ہے۔ پراپرٹی کے لین دین کے منظر نامے میں، بلاک چین خریدار اور بیچنے والے کے لیے ایک ایک لیجر بناتا ہے۔ تمام لین دین کو دونوں فریقوں کے ذریعہ منظور شدہ ہونا چاہئے اور حقیقی وقت میں ان کے دونوں لیجرز میں خود بخود اپ ڈیٹ ہو جاتے ہیں۔ تاریخی لین دین میں کوئی بھی بدعنوانی پورے لیجر کو خراب کر دے گی۔ بلاک چین ٹیکنالوجی کی یہ خصوصیات مختلف شعبوں میں اس کے استعمال کا باعث بنی ہیں، بشمول بٹ کوائن جیسی ڈیجیٹل کرنسی کی تخلیق۔

مختلف صنعتیں بلاک چین کا استعمال کیسے کرتی ہیں؟

بلاک چین ایک ابھرتی ہوئی ٹیکنالوجی ہے جسے مختلف صنعتوں کے ذریعہ اختراعی انداز میں اپنایا جا رہا ہے۔ ہم مندرجہ ذیل ذیلی حصوں میں مختلف صنعتوں میں استعمال کے کچھ معاملات بیان کرتے ہیں

انرجی

انرجی کمپنیاں بلاک چین ٹیکنالوجی کا استعمال پیئر ٹو پیئر انرجی ٹریڈنگ پلیٹ فارم بنانے اور قابل تجدید توانائی تک رسائی کو ہموار کرنے کے لیے کرتی ہیں۔ مثال کے طور پر، ان استعمالات پر غور کریں:

بلاک چین پر مبنی توانائی کمپنیوں نے افراد کے درمیان بجلی کی فروخت کے لیے ایک تجارتی پلیٹ فارم بنایا ہے۔ سولر پینل والے گھر کے مالکان اس پلیٹ فارم کو اپنی اضافی شمسی توانائی پڑوسیوں کو فروخت کرنے کے لیے استعمال کرتے ہیں۔ یہ عمل بڑی حد تک خودکار ہے: سمارٹ میٹر ٹرانزیکشنز بناتے ہیں، اور بلاک چین انہیں ریکارڈ کرتا ہے۔

بلاک چین پر مبنی کراؤڈ فنڈنگ ​​کے اقدامات کے ساتھ، صارفین توانائی تک رسائی سے محروم کمیونٹیز میں سولر پینلز کو سپانسر کر سکتے ہیں اور ان کے مالک بن سکتے ہیں۔ سولر پینلز کی تعمیر کے بعد سپانسرز ان کمیونٹیز کے لیے کرایہ بھی وصول کر سکتے ہیں۔

مالیات

روایتی مالیاتی نظام، جیسے بینک اور اسٹاک ایکسچینج، آن لائن ادائیگیوں، اکاؤنٹس اور مارکیٹ ٹریڈنگ کا انتظام کرنے کے لیے بلاک چین خدمات کا استعمال کرتے ہیں۔ مثال کے طور پر، سنگاپور ایکسچینج لمیٹڈ، ایک سرمایہ کاری ہولڈنگ کمپنی جو پورے ایشیا میں مالیاتی تجارتی خدمات فراہم کرتی ہے، ایک زیادہ موثر انٹربینک ادائیگی اکاؤنٹ بنانے کے لیے بلاک چین ٹیکنالوجی کا استعمال کرتی ہے۔ بلاک چین کو اپنا کر، انہوں نے کئی چیلنجز کو حل کیا، بشمول بیچ پروسیسنگ اور کئی ہزار مالیاتی لین دین کی دستی مفاہمت وغیرہ۔

میڈیا اور تفریح

میڈیا اور انٹرٹینمنٹ کی کمپنیاں کاپی رائٹ ڈیٹا کو منظم کرنے کے لیے بلاک چین سسٹم استعمال کرتی ہیں۔ فنکاروں کے منصفانہ معاوضے کے لیے کاپی رائٹ کی تصدیق ضروری ہے۔ کاپی رائٹ مواد کی فروخت یا منتقلی کو ریکارڈ کرنے کے لیے متعدد لین دین کی ضرورت ہوتی ہے۔ سونی میوزک انٹرٹینمنٹ جاپان ڈیجیٹل حقوق کے انتظام کو مزید موثر بنانے کے لیے بلاک چین سروسز کا استعمال کرتا ہے۔ انہوں نے پیداواری صلاحیت کو بہتر بنانے اور کاپی رائٹ پروسیسنگ میں لاگت کو کم کرنے کے لیے کامیابی کے ساتھ بلاکچین حکمت عملی کا استعمال کیا ہے۔

ریٹیل

خوردہ کمپنیاں سپلائی کرنے والوں اور خریداروں کے درمیان سامان کی نقل و حرکت کو ٹریک کرنے کے لیے بلاک چین کا استعمال کرتی ہیں۔ مثال کے طور پر، ایمیزون ریٹیل نے تقسیم شدہ لیجر ٹیکنالوجی کے نظام کے لیے ایک پیٹنٹ دائر کیا ہے جو اس بات کی تصدیق کے لیے بلاک چین ٹیکنالوجی کا استعمال کرے گا کہ پلیٹ فارم پر فروخت ہونے والے تمام سامان مستند ہیں۔ ایمیزون کے بیچنے والے شرکاء جیسے کہ مینوفیکچررز، کوریئرز، ڈسٹری بیوٹرز، اختتامی صارفین اور ثانوی صارفین کو سرٹیفکیٹ اتھارٹی کے ساتھ رجسٹر ہونے کے بعد لیجر میں ایونٹس شامل کرنے کی اجازت دے کر اپنی عالمی سپلائی چین کا نقشہ بنا سکتے ہیں۔

بلاک چین سروسز حاصل کرنے کے لیے اس لنک پر رابطہ کریں

Fiverr : https://www.fiverr.com/shaguonline/develop-your-own-crypto-exchange-platform-website-android-ios-applications

Linked : linkedin.com/in/shagufta-naz-0ba5301b5

Cell Phone: +92-321-4617-046

بلاک چین ٹیکنالوجی کی خصوصیات کیا ہیں؟

بلاک چین ٹیکنالوجی میں مندرجہ ذیل اہم خصوصیات ہیں

ڈی سینٹرلائزیشن

بلاک چین میں ڈی سینٹرلائزیشن سے مراد کنٹرول اور فیصلہ سازی کو مرکزی ادارے (فرد، تنظیم، یا گروپ) سے تقسیم شدہ نیٹ ورک میں منتقل کرنا ہے۔ ڈی سینٹرلائزڈ بلاکچین نیٹ ورکس شرکاء کے درمیان اعتماد کی ضرورت کو کم کرنے کے لئے شفافیت کا استعمال کرتے ہیں۔ یہ نیٹ ورکس شرکاء کو ایک دوسرے پر اختیار یا کنٹرول کرنے سے بھی روکتے ہیں جو نیٹ ورک کی فعالیت کو کم کرتے ہیں۔

ایمیوٹیبیلیٹی

غیر متغیریت کا مطلب ہے کہ کسی چیز کو تبدیل نہیں کیا جاسکتا ہے۔ ایک بار جب کسی نے اسے مشترکہ لیجر میں ریکارڈ کیا ہے تو کوئی بھی شریک لین دین کے ساتھ چھیڑ چھاڑ نہیں کرسکتا ہے۔ اگر ٹرانزیکشن ریکارڈ میں کوئی نقص شامل ہے تو ، آپ کو غلطی کو پلٹنے کے لئے ایک نیا لین دین شامل کرنا ہوگا ، اور دونوں لین دین نیٹ ورک پر نظر آتے ہیں۔

اتفاق رائے

ایک بلاک چین سسٹم لین دین کو ریکارڈ کرنے کے لئے شرکاء کی رضامندی کے بارے میں قواعد قائم کرتا ہے۔ آپ نئے لین دین کو صرف اس وقت ریکارڈ کرسکتے ہیں جب نیٹ ورک میں شرکاء کی اکثریت اپنی رضامندی دے۔

بلاک چین ٹیکنالوجی کے کلیدی اجزاء کیا ہیں؟

بلاک چین فن تعمیر میں مندرجہ ذیل اہم اجزاء ہیں

ایک تقسیم شدہ کھاتہ

ایک تقسیم شدہ لیجر بلاک چین نیٹ ورک میں مشترکہ ڈیٹا بیس ہے جو لین دین کو ذخیرہ کرتا ہے ، جیسے ایک مشترکہ فائل جس میں ٹیم میں ہر کوئی ترمیم کرسکتا ہے۔ زیادہ تر مشترکہ ٹیکسٹ ایڈیٹرز میں ، ترمیم کے حقوق رکھنے والا کوئی بھی شخص پوری فائل کو حذف کرسکتا ہے۔ تاہم ، تقسیم شدہ لیجر ٹکنالوجیوں میں اس بارے میں سخت قواعد ہیں کہ کون ترمیم کرسکتا ہے اور کس طرح ترمیم کرنا ہے۔ ایک بار اندراج ریکارڈ ہونے کے بعد آپ انہیں حذف نہیں کرسکتے ہیں۔

سمارٹ کنٹریکٹ

کمپنیاں کسی تیسری پارٹی کی مدد کی ضرورت کے بغیر کاروباری معاہدوں کو خود منظم کرنے کے لئے اسمارٹ معاہدوں کا استعمال کرتی ہیں۔ وہ بلاکچین سسٹم پر ذخیرہ کردہ پروگرام ہیں جو پہلے سے طے شدہ شرائط کو پورا کرنے پر خود بخود چلتے ہیں۔ وہ چیک چلاتے ہیں تاکہ لین دین اعتماد کے ساتھ مکمل کیا جاسکے۔ مثال کے طور پر ، ایک لاجسٹکس کمپنی کے پاس ایک اسمارٹ معاہدہ ہوسکتا ہے جو بندرگاہ پر سامان پہنچنے کے بعد خود بخود ادائیگی کرتا ہے۔

عوامی کلیدی کرپٹوگرافی

عوامی کلیدی کرپٹوگرافیبلاک چین نیٹ ورک میں شرکاء کی منفرد شناخت کرنے کے لئے ایک سیکورٹی خصوصیت ہے۔ یہ میکانزم نیٹ ورک کے ممبروں کے لئے چابیوں کے دو سیٹ تیار کرتا ہے۔ ایک کلید ایک عوامی کلید ہے جو نیٹ ورک میں ہر کسی کے لئے عام ہے۔ دوسرا ایک نجی کلید ہے جو ہر رکن کے لئے منفرد ہے. لیجر میں ڈیٹا کو ان لاک کرنے کے لئے نجی اور عوامی چابیاں مل کر کام کرتی ہیں۔

مثال کے طور پر ، جان اور جیل نیٹ ورک کے دو ممبر ہیں۔ جان ایک لین دین ریکارڈ کرتا ہے جو اس کی نجی کلید کے ساتھ خفیہ کیا جاتا ہے۔ جیل اسے اپنی عوامی کلید سے ڈی کرپٹ کر سکتی ہے۔ اس طرح ، جیل کو یقین ہے کہ جان نے لین دین کیا ہے۔ اگر جان کی نجی چابی کے ساتھ چھیڑ چھاڑ کی گئی ہوتی تو جیل کی عوامی کلید کام نہ کرتی۔

بلاک چین کیسے کام کرتا ہے؟

اگرچہ بنیادی بلاک چین میکانزم پیچیدہ ہیں ، ہم مندرجہ ذیل اقدامات میں ایک مختصر جائزہ دیتے ہیں۔ بلاک چین سافٹ ویئر ان میں سے زیادہ تر اقدامات کو خودکار بنا سکتا ہے

مرحلہ 1 – لین دین ریکارڈ کریں

ایک بلاک چین ٹرانزیکشن بلاکچین نیٹ ورک میں جسمانی یا ڈیجیٹل اثاثوں کی ایک پارٹی سے دوسرے میں نقل و حرکت کو ظاہر کرتی ہے۔ یہ ڈیٹا بلاک کے طور پر ریکارڈ کیا جاتا ہے اور اس میں اس طرح کی تفصیلات شامل ہوسکتی ہیں:

اس لین دین میں کون ملوث تھا؟
لین دین کے دوران کیا ہوا؟
یہ لین دین کب ہوا؟
لین دین کہاں ہوا؟
یہ لین دین کیوں ہوا؟
اثاثوں کا کتنا تبادلہ کیا گیا؟
لین دین کے دوران کتنی پیشگی شرائط پوری کی گئیں؟

مرحلہ 2 – اتفاق رائے حاصل کریں

تقسیم شدہ بلاک چین نیٹ ورک پر زیادہ تر شرکاء کو اس بات سے اتفاق کرنا ضروری ہے کہ ریکارڈ شدہ لین دین درست ہے۔ نیٹ ورک کی قسم پر منحصر ہے ، معاہدے کے قواعد مختلف ہوسکتے ہیں لیکن عام طور پر نیٹ ورک کے آغاز میں قائم ہوتے ہیں۔

مرحلہ 3 – بلاکس کو لنک کریں

ایک بار جب شرکاء اتفاق رائے پر پہنچ جاتے ہیں تو ، بلاک چین پر لین دین کو لیجر بک کے صفحات کے مساوی بلاکس میں لکھا جاتا ہے۔ لین دین کے ساتھ ساتھ نئے بلاک میں ایک کرپٹوگرافک ہیش بھی شامل کیا گیا ہے۔ ہیش ایک زنجیر کے طور پر کام کرتا ہے جو بلاکس کو ایک ساتھ جوڑتا ہے۔ اگر بلاک کے مندرجات کو جان بوجھ کر یا غیر ارادی طور پر تبدیل کیا جاتا ہے تو ، ہیش ویلیو تبدیل ہوجاتی ہے ، جس سے ڈیٹا سے چھیڑ چھاڑ کا پتہ لگانے کا ایک طریقہ فراہم ہوتا ہے۔

اس طرح ، بلاکس اور زنجیریں محفوظ طریقے سے منسلک ہوتی ہیں ، اور آپ ان میں ترمیم نہیں کرسکتے ہیں۔ ہر اضافی بلاک پچھلے بلاک اور اس طرح پورے بلاک چین کی تصدیق کو مضبوط کرتا ہے۔ یہ ٹاور بنانے کے لئے لکڑی کے بلاکوں کو اسٹیک کرنے کی طرح ہے۔ آپ صرف اوپر بلاکس کو اسٹیک کرسکتے ہیں ، اور اگر آپ ٹاور کے وسط سے ایک بلاک ہٹاتے ہیں تو ، پورا ٹاور ٹوٹ جاتا ہے۔

مرحلہ 4 – لیجر کا اشتراک کریں

یہ نظام تمام شرکاء کو مرکزی لیجر کی تازہ ترین کاپی تقسیم کرتا ہے۔

بلاک چین نیٹ ورکس کی اقسام کیا ہیں؟

بلاک چین میں ڈی سینٹرلائزڈ یا تقسیم شدہ نیٹ ورکس کی چار اہم اقسام ہیں

پبلک بلاک چین نیٹ ورکس

عوامی بلاکچین بغیر اجازت کے ہیں اور ہر ایک کو ان میں شامل ہونے کی اجازت دیتے ہیں۔ بلاکچین کے تمام ارکان کو بلاک چین کو پڑھنے ، ترمیم کرنے اور توثیق کرنے کے مساوی حقوق حاصل ہیں۔ لوگ بنیادی طور پر بٹ کوائن ، ایتھیریم ، اور لائٹ کوائن جیسی کرپٹو کرنسیوں کے تبادلے اور کان کنی کے لئے عوامی بلاکچین استعمال کرتے ہیں۔

نجی بلاک چین نیٹ ورک

ایک واحد تنظیم نجی بلاکچینز کو کنٹرول کرتی ہے ، جسے منظم بلاکچین بھی کہا جاتا ہے۔ اتھارٹی اس بات کا تعین کرتی ہے کہ کون رکن بن سکتا ہے اور نیٹ ورک میں ان کے کیا حقوق ہیں۔ نجی بلاکچین صرف جزوی طور پر غیر مرکزی ہیں کیونکہ ان تک رسائی کی پابندیاں ہیں۔ رپل ، کاروباری اداروں کے لئے ایک ڈیجیٹل کرنسی ایکسچینج نیٹ ورک ، نجی بلاک چین کی ایک مثال ہے۔

ہائبرڈ بلاک چین نیٹ ورک

ہائبرڈ بلاک چین نجی اور عوامی نیٹ ورکس دونوں کے عناصر کو یکجا کرتے ہیں۔ کمپنیاں عوامی نظام کے ساتھ ساتھ نجی ، اجازت پر مبنی نظام قائم کرسکتے ہیں۔ اس طرح ، وہ باقی ڈیٹا کو عوامی رکھتے ہوئے بلاک چین میں ذخیرہ کردہ مخصوص ڈیٹا تک رسائی کو کنٹرول کرتے ہیں۔ وہ عوامی ممبروں کو یہ چیک کرنے کی اجازت دینے کے لئے اسمارٹ معاہدوں کا استعمال کرتے ہیں کہ آیا نجی لین دین مکمل ہوچکا ہے یا نہیں۔ مثال کے طور پر ، ہائبرڈ بلاکچینز بینک کی ملکیت والی کرنسی کو نجی رکھتے ہوئے ڈیجیٹل کرنسی تک عوامی رسائی فراہم کرسکتے ہیں۔

کنسورشیم بلاک چین نیٹ ورکس

تنظیموں کا ایک گروپ کنسورشیم بلاکچین نیٹ ورکس کو کنٹرول کرتا ہے۔ پہلے سے منتخب تنظیمیں بلاک چین کو برقرار رکھنے اور ڈیٹا تک رسائی کے حقوق کا تعین کرنے کی ذمہ داری کا اشتراک کرتی ہیں۔ صنعتیں جن میں بہت سے اداروں کے مشترکہ اہداف ہیں اور مشترکہ ذمہ داری سے فائدہ اٹھاتے ہیں وہ اکثر کنسورشیم بلاک چین نیٹ ورکس کو ترجیح دیتے ہیں۔ مثال کے طور پر ، گلوبل شپنگ بزنس نیٹ ورک کنسورشیم ایک غیر منافع بخش بلاکچین کنسورشیم ہے جس کا مقصد شپنگ انڈسٹری کو ڈیجیٹلائز کرنا اور میری ٹائم انڈسٹری آپریٹرز کے مابین تعاون میں اضافہ کرنا ہے۔

بلاک چین پروٹوکول کیا ہیں؟

بلاکچین پروٹوکول کی اصطلاح مختلف قسم کے بلاکچین پلیٹ فارمز سے مراد ہے جو ایپلی کیشن کی ترقی کے لئے دستیاب ہیں۔ ہر بلاکچین پروٹوکول مخصوص صنعتوں یا ایپلی کیشنز کے مطابق بنیادی بلاکچین اصولوں کو اپناتا ہے۔ بلاک چین پروٹوکول کی کچھ مثالیں مندرجہ ذیل ذیلی حصوں میں فراہم کی گئی ہیں:

ہائپرلیجر فیبرک

ہائپرلیجر فیبرک ایک اوپن سورس پروجیکٹ ہے جس میں ٹولز اور لائبریریوں کا ایک مجموعہ ہے۔ انٹرپرائزز اسے نجی بلاک چین ایپلی کیشنز کو تیزی سے اور مؤثر طریقے سے بنانے کے لئے استعمال کرسکتے ہیں۔ یہ ایک ماڈیولر ، عام مقاصد کا فریم ورک ہے جو منفرد شناخت کے انتظام اور رسائی کنٹرول کی خصوصیات پیش کرتا ہے۔ یہ خصوصیات اسے مختلف ایپلی کیشنز کے لئے موزوں بناتی ہیں ، جیسے سپلائی چینز کا ٹریک اینڈ ٹریس ، ٹریڈ فنانس ، وفاداری اور انعامات ، اور مالی اثاثوں کی کلیئرنگ تصفیہ۔

ایتھریم

ایتھیریم ایک ڈی سینٹرلائزڈ اوپن سورس بلاک چین پلیٹ فارم ہے جسے لوگ عوامی بلاک چین ایپلی کیشنز بنانے کے لئے استعمال کرسکتے ہیں۔ ایتھیریم انٹرپرائز کاروباری استعمال کے معاملات کے لئے ڈیزائن کیا گیا ہے.

کورڈا

کورڈا ایک اوپن سورس بلاک چین منصوبہ ہے جو کاروبار کے لئے ڈیزائن کیا گیا ہے۔ کورڈا کے ساتھ ، آپ انٹرآپریبل بلاک چین نیٹ ورک تشکیل دے سکتے ہیں جو سخت رازداری میں لین دین کرتے ہیں۔ کاروبار قدر کے ساتھ براہ راست لین دین کرنے کے لئے کورڈا کی اسمارٹ کنٹریکٹ ٹیکنالوجی کا استعمال کرسکتے ہیں۔ اس کے زیادہ تر صارفین مالیاتی ادارے ہیں۔

کورم

کورم ایک اوپن سورس بلاک چین پروٹوکول ہے جو ایتھیریم سے اخذ کیا گیا ہے۔ یہ خاص طور پر ایک نجی بلاکچین نیٹ ورک میں استعمال کے لئے ڈیزائن کیا گیا ہے ، جہاں صرف ایک رکن تمام نوڈز کا مالک ہے ، یا کنسورشیم بلاک چین نیٹ ورک میں ، جہاں متعدد ارکان نیٹ ورک کے ایک حصے کے مالک ہیں۔

بلاک چین ٹیکنالوجی کیسے تیار ہوئی؟

سال 1970 کی دہائی کے آخر میں اس وقت بلاکچین ٹکنالوجی کی جڑیں ہیں جب رالف مرکل نامی ایک کمپیوٹر سائنسدان نے ہیش کے درختوں یا مرکل کے درختوں کو پیٹنٹ کیا۔ یہ درخت خفیہ نگاری کا استعمال کرتے ہوئے بلاکس کو جوڑ کر ڈیٹا کو اسٹور کرنے کے لئے کمپیوٹر سائنس ڈھانچہ ہیں۔ 1990 کی دہائی کے آخر میں ، اسٹورٹ ہیبر اور ڈبلیو اسکاٹ اسٹورنیٹا نے ایک ایسے نظام کو نافذ کرنے کے لئے مرکل کے درختوں کا استعمال کیا جس میں دستاویز کے ٹائم اسٹیمپ میں چھیڑ چھاڑ نہیں کی جاسکتی ہے۔ یہ بلاکچین کی تاریخ کی پہلی مثال تھی۔

ان تینوں جنریشن میں یہ ٹیکنالوجی تیار ہوتی جارہی ہے

پہلی جنریشن – بٹ کوائن اور دیگر ورچوئل کرنسیوں

سال 2008 میں ، ایک گمنام فرد یا افراد کا گروہ جس کا نام صرف ستوشی نکاموٹو کے نام سے جانا جاتا ہے ، نے اپنی جدید شکل میں بلاکچین ٹیکنالوجی کا خاکہ پیش کیا۔ بٹ کوائن بلاکچین کے بارے میں ستوشی کے خیال میں بٹ کوائن لین دین کے لئے معلومات کے 1 ایم بی بلاکس استعمال کیے گئے تھے۔ بٹ کوائن بلاکچین سسٹم کی بہت سی خصوصیات آج بھی بلاکچین ٹیکنالوجی میں مرکزی حیثیت رکھتی ہیں۔

دوسری جنریشن- سمارٹ معاہدے

پہلی نسل کی کرنسیوں کے ابھرنے کے کچھ سال بعد ، ڈویلپرز نے کریپٹوکرنسی سے آگے بلاکچین ایپلی کیشنز پر غور کرنا شروع کیا۔ مثال کے طور پر ، ایتھریم کے موجدوں نے اثاثوں کی منتقلی کے لین دین میں بلاک چین ٹکنالوجی کو استعمال کرنے کا فیصلہ کیا۔ ان کی اہم شراکت سمارٹ معاہدوں کی خصوصیت تھی۔

تیسری جنریشن – مستقبل

چونکہ کمپنیاں نئی ​​ایپلی کیشنز کو دریافت کرتی ہیں اور ان پر عمل درآمد کرتی ہیں ، بلاکچین ٹیکنالوجی تیار اور ترقی کرتی رہتی ہے۔ کمپنیاں پیمانے اور گنتی کی حدود کو حل کررہی ہیں ، اور جاری بلاکچین انقلاب میں ممکنہ مواقع لامحدود ہیں۔

بلاک چین ٹکنالوجی کے فوائد کیا ہیں؟

بلاک چین ٹکنالوجی اثاثوں کے لین دین کے انتظام میں بہت سے فوائد لاتی ہے۔ ہم ان میں سے کچھ کو درج ذیل ذیلی حصوں میں درج کرتے ہیں

اعلی درجے کی سلامتی

بلاک چین سسٹم اعلی درجے کی سلامتی اور اعتماد فراہم کرتا ہے جس کی جدید ڈیجیٹل لین دین کی ضرورت ہوتی ہے۔ ہمیشہ ایک خوف رہتا ہے کہ کوئی اپنے لئے جعلی رقم پیدا کرنے کے لئے بنیادی سافٹ ویئر میں جوڑ توڑ کرے گا۔ لیکن بلاکچین ایک انتہائی محفوظ بنیادی سافٹ ویئر سسٹم بنانے کے لئے خفیہ نگاری ، وکندریقرن اور اتفاق رائے کے تین اصولوں کا استعمال کرتا ہے جس کے ساتھ چھیڑ چھاڑ کرنا تقریبا ناممکن ہے۔ ناکامی کا کوئی ایک نقطہ نہیں ہے ، اور ایک بھی صارف لین دین کے ریکارڈ کو تبدیل نہیں کرسکتا ہے۔

بہتر کارکردگی

کاروباری سے کاروبار کے لین دین میں بہت زیادہ وقت لگ سکتا ہے اور آپریشنل رکاوٹیں پیدا ہوسکتی ہیں ، خاص طور پر جب تعمیل اور تیسری پارٹی کے ریگولیٹری ادارے شامل ہوں۔ بلاکچین میں شفافیت اور سمارٹ معاہدے اس طرح کے کاروباری لین دین کو تیز اور زیادہ موثر بناتے ہیں۔

تیز آڈٹنگ

کاروباری اداروں کو لازمی طور پر قابل اظہار انداز میں ای ٹرانزیکشنز کو محفوظ طریقے سے پیدا کرنے ، تبادلے ، محفوظ شدہ دستاویزات اور تعمیر نو کرنے کے قابل ہونا چاہئے۔ بلاکچین ریکارڈ تاریخی طور پر ناقابل تسخیر ہیں ، جس کا مطلب ہے کہ تمام ریکارڈوں کو ہمیشہ وقت کے ساتھ ترتیب دیا جاتا ہے۔ اس ڈیٹا کی شفافیت آڈٹ پروسیسنگ کو بہت تیزی سے بناتی ہے۔

بٹ کوائن اور بلاک چین میں کیا فرق ہے؟

بٹ کوائن اور بلاکچین کو ایک دوسرے کے ساتھ استعمال کیا جاسکتا ہے ، لیکن وہ دو مختلف چیزیں ہیں۔ چونکہ بٹ کوائن بلاکچین ٹکنالوجی کا ابتدائی اطلاق تھا ، لہذا لوگوں نے نادانستہ طور پر بٹ کوائن کا استعمال بلاکچین کے لئے کرنا شروع کیا ، جس سے یہ غلط نام پیدا ہوا۔ لیکن بلاکچین ٹکنالوجی میں بٹ کوائن سے باہر بہت سی ایپلی کیشنز ہیں۔

بٹ کوائن ایک ڈیجیٹل کرنسی ہے جو بغیر کسی مرکزی کنٹرول کے کام کرتی ہے۔ بٹ کوائنز اصل میں آن لائن مالی لین دین کرنے کے لئے بنائے گئے تھے لیکن اب ان کو ڈیجیٹل اثاثے سمجھا جاتا ہے جو کسی بھی دوسری عالمی کرنسی ، جیسے امریکی ڈالر یا یورو میں تبدیل ہوسکتے ہیں۔ ایک عوامی بٹ کوائن بلاک چین نیٹ ورک مرکزی لیجر تخلیق اور انتظام کرتا ہے۔

بٹ کوائن نیٹ ورک

ایک عوامی لیجر تمام بٹ کوائن لین دین کو ریکارڈ کرتا ہے ، اور دنیا بھر کے سرورز اس لیجر کی کاپیاں رکھتے ہیں۔ سرور بینکوں کی طرح ہیں۔ اگرچہ ہر بینک صرف اس رقم کے بارے میں جانتا ہے جو اس کے صارفین کے تبادلے میں ہے ، لیکن بٹ کوائن سرور دنیا کے ہر ایک بٹ کوائن لین دین سے واقف ہیں۔

کوئی بھی اسپیئر کمپیوٹر والا ان میں سے ایک سرور ترتیب دے سکتا ہے ، جسے نوڈ کے نام سے جانا جاتا ہے۔ یہ ایسا ہی ہے جیسے بینک اکاؤنٹ کے بجائے آپ کا اپنا بٹ کوائن بینک کھولیں۔

بٹ کوائن مائننگ

پبلک بٹ کوائن نیٹ ورک پر ، ممبران نئے بلاکس بنانے کے لئے کریپٹوگرافک مساوات کو حل کرکے کریپٹوکرنسی کے لئے میرے۔ یہ نظام ہر نئے ٹرانزیکشن کو عوامی طور پر نیٹ ورک پر نشر کرتا ہے اور اسے نوڈ سے نوڈ تک شیئر کرتا ہے۔ ہر دس منٹ میں ، کان کن ان لین دین کو ایک نئے بلاک میں جمع کرتے ہیں اور انہیں مستقل طور پر بلاکچین میں شامل کرتے ہیں ، جو بٹ کوائن کی حتمی اکاؤنٹ بک کی طرح کام کرتا ہے۔

کان کنی میں اہم کمپیوٹیشنل وسائل کی ضرورت ہوتی ہے اور سافٹ ویئر کے عمل کی پیچیدگی کی وجہ سے کافی وقت لگتا ہے۔ اس کے بدلے میں ، کان کن تھوڑی مقدار میں کرپٹو کرنسی کماتے ہیں۔ کان کن جدید کلرک کے طور پر کام کرتے ہیں جو لین دین کو ریکارڈ کرتے ہیں اور لین دین کی فیس جمع کرتے ہیں۔

بلاک چین کریپٹوگرافی ٹکنالوجی کا استعمال کرتے ہوئے ، پورے نیٹ ورک کے تمام شرکاء اس بات پر اتفاق رائے تک پہنچتے ہیں کہ کون کون سے سککوں کا مالک ہے۔

ڈیٹا بیس اور بلاک چین میں کیا فرق ہے؟

بلاک چین ایک خاص قسم کا ڈیٹا بیس مینجمنٹ سسٹم ہے جس میں باقاعدہ ڈیٹا بیس سے زیادہ خصوصیات ہیں۔ ہم مندرجہ ذیل فہرست میں روایتی ڈیٹا بیس اور بلاک چین کے مابین کچھ اہم اختلافات کو بیان کرتے ہیں

موجودہ اعداد و شمار پر اعتماد کو نقصان پہنچائے بغیر بلاکچینز کنٹرول کو وکندریقرت بناتے ہیں۔ یہ دوسرے ڈیٹا بیس سسٹم میں ممکن نہیں ہے۔ لین دین میں شامل کمپنیاں اپنے پورے ڈیٹا بیس کا اشتراک نہیں کرسکتی ہیں۔ لیکن بلاکچین نیٹ ورکس میں ، ہر کمپنی کے پاس لیجر کی اپنی کاپی ہوتی ہے ، اور یہ نظام خود بخود دونوں لیجرز کے مابین مستقل مزاجی کو برقرار رکھتا ہے۔ اگرچہ زیادہ تر ڈیٹا بیس سسٹم میں آپ ڈیٹا میں ترمیم یا حذف کرسکتے ہیں ، بلاکچین میں آپ صرف ڈیٹا داخل کرسکتے ہیں۔

بلاک چین کلاؤڈ سے کیسے مختلف ہے؟

کلاؤڈ کی اصطلاح سے مراد کمپیوٹنگ خدمات ہیں جن تک آن لائن تک رسائی حاصل کی جاسکتی ہے۔ آپ سافٹ ویئر کو بطور سروس (ساس) ، بطور سروس (پی اے اےا یس) ، اور کلاؤڈ سے بطور سروس (آئی اے اے ایس) انفراسٹرکچر تک رسائی حاصل کرسکتے ہیں۔ کلاؤڈ فراہم کرنے والے اپنے ہارڈ ویئر اور انفراسٹرکچر کا انتظام کرتے ہیں اور آپ کو انٹرنیٹ پر کمپیوٹنگ کے ان وسائل تک رسائی فراہم کرتے ہیں۔ وہ صرف ڈیٹا بیس مینجمنٹ کے مقابلے میں بہت سارے وسائل مہیا کرتے ہیں۔ اگر آپ کسی عوامی بلاکچین نیٹ ورک میں شامل ہونا چاہتے ہیں تو ، آپ کو اپنی لیجر کاپی کو اسٹور کرنے کے لئے اپنے ہارڈ ویئر کے وسائل فراہم کرنے کی ضرورت ہے۔ آپ اس مقصد کے لئے بھی بادل سے سرور استعمال کرسکتے ہیں۔ کچھ کلاؤڈ فراہم کرنے والے کلاؤڈ سے خدمت (بی اے اے ایس) کے طور پر مکمل بلاک چین بھی پیش کرتے ہیں۔

بطور خدمت بلاک چین کیا ہے؟

بلاک چین بطور سروس (بی اے اے ایس) ایک منظم بلاکچین سروس ہے جو تیسرا فریق کلاؤڈ میں فراہم کرتا ہے۔ آپ بلاک چین ایپلی کیشنز اور ڈیجیٹل خدمات تیار کرسکتے ہیں جبکہ کلاؤڈ فراہم کنندہ انفراسٹرکچر اور بلاک چین بلڈنگ ٹولز کی فراہمی کرتا ہے۔ آپ سبھی کو موجودہ بلاک چین ٹکنالوجی کو اپنی مرضی کے مطابق بنانا ہے ، جو بلاک چین کو اپنانے کو تیز اور زیادہ موثر بناتا ہے۔

بلاک چین سروسز حاصل کرنے کے لیے اس لنک پر رابطہ کریں

Fiverr : https://www.fiverr.com/shaguonline/develop-your-own-crypto-exchange-platform-website-android-ios-applications

Linked : linkedin.com/in/shagufta-naz-0ba5301b5

Cell Phone: +92-321-4617-046

اے ڈبلیو ایس بلاکچین خدمات کیا ہیں؟

اے ڈبلیو ایس بلاک چین سروسز آپ کی ضرورت کی تائید کے لئے مقصد سے تیار کردہ ٹولز مہیا کرتی ہیں۔ آپ ان کا استعمال سنٹرلائزڈ لیجر ڈیٹا بیس سے ہر چیز کی تعمیر کے لئے کرسکتے ہیں جو کثیر الجہتی ، مکمل طور پر منظم بلاکچین نیٹ ورک میں لین دین کا غیر منقولہ ریکارڈ برقرار رکھتا ہے جو بیچوانوں کو ختم کرنے میں مدد کرتا ہے۔ اے ڈبلیو ایس کے شراکت داروں کے متعدد جائز بلاک چین حل ہیں جو ہائپرلیڈر ، کورڈا ، ایتھرئم ، کورم اور بہت کچھ سمیت تمام بڑے بلاکچین پروٹوکول کی حمایت کرتے ہیں۔ اس کے نتیجے میں ، آپ اے ڈبلیو ایس کے ساتھ زیادہ آسانی سے ، جلدی اور موثر انداز میں بلاک چین اور لیجر ایپلی کیشنز تیار کرسکتے ہیں۔ آج اے ڈبلیو ایس اکاؤنٹ بنا کر بلاک چین کے ساتھ شروعات کریں۔

/ Published posts: 1249

Shagufta Naz is a Multi-disciplinary Designer who is leading NewzFlex Product Design Team and also working on the Strategic planning & development for branded content across NewzFlex Digital Platforms through comprehensive research and data analysis. She is currently working as the Principal UI/UX Designer & Content-writer for NewzFlex and its projects, and also as an Editor for the sponsored section of NewzFlex.

Twitter
Facebook
Youtube
Linkedin
Instagram